نواز شریف کو وطن واپس لانا آسان کام نہیں، شیخ رشید

وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ حکومت کی خواہش تو ہے کہ نواز شریف کو واپس لایا جائے لیکن ہم اسحٰق ڈار اور سلمان شہباز کو نہیں لاسکے تو نواز شریف کو لانا آسان کام تو نہیں۔
لاہور میں پریس کانفرنس میں انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ریلوے کی بحالی کا حکم دیا ہے اور 4 ہفتوں میں اسکی بحالی مکمل کی جائے گی، ایم ایل ون سب سے بڑا انقلاب اور گیم چینجر ہے۔
انہوں نے کہا کہ اس گیم چینجر کی اکنیک اور وزیراعظم سے منظوری ہوچکی ہے اور اس کا ٹینڈر اگلے ماہ کی 5 سے 10 تاریخ تک مارکیٹ میں آجائے گا۔
مزید پڑھیں: حکومت نواز شریف کی وطن واپسی کیلئے عدالت جائے گی، شیخ رشید
شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ فریٹ کی آن لائن بکنگ شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ مال لوڈ ہونے کا وزن اور باقی سب ڈیجیٹل کیا جائے۔
بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شالیمار ایکسپریس کے کرایوں میں 25 اگست سے 10 فیصد کمی کی جائے گی۔

سیاسی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے اپوزیشن کے بارے میں کہا کہ مجھے تو محرم الحرام کے بعد بھی ان کی کوئی کل جماعتی کانفرنس (اے پی سی)نظر نہیں آرہی، یہ اے پی سی ان کے اپنے گلے پڑ سکتی ہے کیونکہ یہ لوگوں کو کال نہیں دے سکتے۔

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن چاہتے ہیں کہ مسلم لیگ (ن) اور پیپلزپارٹی کا مسئلہ تحریری ہو لیکن شہباز شریف کسی قیمت پر تحریری نہیں دیں گے جبکہ پی پی پی اور مسلم لیگ(ن) کے بھی آپس میں بظاہر اختلاف ہیں۔

تحریر جاری ہے‎

انہوں نے کہا کہ یہ لوگ عمران خان کے خلاف کوئی تحریک چلانے کی پوزیشن میں نہیں ہے جبکہ مریم نواز نے جتنے بھی پتھر چلائے یا چلوائے ہیں وہ براہ راست شہباز شریف کی سیاست پر لگے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شہباز اور حمزہ شہباز کا کیس گہرے پانیوں میں ہے کیونکہ مریم نواز سوچتی ہیں کہ میں نااہل ہوگئی ہوں یہ ایسے کیسے پھر رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ انہوں (مریم نواز) نے ایک سال تک خاموشی اختیار کی اور ایک سال تک ان کا ٹوئٹر زنگ آلود رہا اور انہیں سگنل ہی نہیں مل رہا تھا لیکن جب ایک سال بعد سگنل ملا تو وہ شہباز شریف کی سیاست کو ٹھا کرکے لگا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں