بولڈ پرفارمنس کی وجہ سے کیریئر کے آغاز میں ہی فلمی دنیا کے اعلیٰ ترین ایوارڈز کے لیے نامزد ہونے والی 34 ہولی وڈ اداکارہ اسکارلٹ جانسن نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں ابتدا میں انتہائی بولڈ اور عریاں کردار دیے گئے۔

بولڈ پرفارمنس کی وجہ سے کیریئر کے آغاز میں ہی فلمی دنیا کے اعلیٰ ترین ایوارڈز کے لیے نامزد ہونے والی 34 ہولی وڈ اداکارہ اسکارلٹ جانسن نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں ابتدا میں انتہائی بولڈ اور عریاں کردار دیے گئے۔

اسکارلٹ جانسن کو زندگی کا پہلا فلمی کردار ہی قدرے بولڈ دیا گیا تھا، ان کی پہلی فلم ’نارتھ‘ 1994 میں ریلیز ہوئی تھی اور اس وقت ان کی عمر 15 برس سے بھی کم تھی۔

اگرچہ اداکارہ کو اپنی پہلی فلم میں اتنا بولڈ نہیں دکھایا گیا تھا، تاہم انہیں آںے والی فلموں میں قدرے بولڈ کردار دیے گئے۔

اسکارلٹ جانسن نے جلد ہی فلم سازوں کی توجہ حاصل کرلی تھی اور انہیں شہرت 1996 میں ریلیز ہونے والی فلم ’فال‘ اور 1997 میں ریلیز ہونے والی فلم ’ہوم الون 3‘ سے ملی۔

دونوں فلموں کی شہرت کے بعد انہیں بولڈ کردار ادا کیے جانے لگے اور انہوں نے 2003 میں ریلیز ہونے والی فلم ’لوسٹ ان ٹرانسلیشن‘ میں خود سے دگنی عمر کے مرد کے ساتھ رومانس کرتے دکھایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: اسکارلٹ جانسن کا سیاست میں انٹری کا عندیہ
اسی سال اسکارلٹ جانسن کی فلم ’گرل ود پرل ایرنگس‘ بھی ریلیز ہوئی، جس میں انہیں ایک بار پھر خود سے بڑی عمر کے مرد کے ساتھ رومانس کرتے دکھایا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں